1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

دل کی آواز ( آج کا گیت )

'اشعار اور گانوں کے کھیل' میں موضوعات آغاز کردہ از چھٹا انسان, ‏22 دسمبر 2016۔

  1. چھٹا انسان
    آف لائن

    چھٹا انسان ممبر

    شمولیت:
    ‏13 دسمبر 2016
    پیغامات:
    500
    موصول پسندیدگیاں:
    126
    ملک کا جھنڈا:
    چاند سی محبوبہ ہو میری کب
    ایسا میں نے سوچا تھا
    ہاں تم بالکل ویسی ہو
    جیسا میں نے سوچا تھا

    نہ قسمیں ہیں نہ رسمیں ہیں
    نہ شکوے ہیں نہ وعدے ہیں
    ایک صورت بھولی بھالی ہے
    دو نیناں سیدھے سادھے ہیں
    ایسا ہی روپ خیالوں میں تھا
    ایسا میں نے سوچا تھا
    ہاں تم بالکل ویسی ہو
    جیسا میں نے سوچا تھا

    میری خوشیاں ہی نا بانٹے
    میرے غم بھی سہنا چاہے
    دیکھے نہ خواب وہ محلوں کے
    میرے دل میں رہنا چاہے
    اس دنیا میں کون تھا ایسا
    جیسا میں نے سوچا تھا
    ہاں تم بالکل ویسی ہو
    جیسا میں نے سوچا تھا
    چاند سی محبوبہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    ۔
    ۔
    ۔ ۔ ۔
  2. چھٹا انسان
    آف لائن

    چھٹا انسان ممبر

    شمولیت:
    ‏13 دسمبر 2016
    پیغامات:
    500
    موصول پسندیدگیاں:
    126
    ملک کا جھنڈا:
    بکھری زلفوں کو سجانے کی اجازت دے دو
    ہاں مجھے پاس میں آنے کی اجازت دے دو
    دل بھی کیا چیز ہے روکے سے نہیں رکتا ہے
    لب سے شبنم کو چرانے کی اجازت دے دو

    خواب آنکھوں میں بسانے کی اجازت دے دو
    راتیں رنگین بنانے کی اجازت دے دو
    دل بھی کیا چیز ہے روکے سے نہیں رکتا ہے
    بےقراری کو مٹانے کی اجازت دے دو
    بکھری زلفوں کو سجانے کی اجازت دے دو

    پاس آتا ہوں صنم
    دور چلا جاتا ہوں
    کتنا نازک ہے بدن
    چھونے سے گھبراتا ہوں
    پیاس نظروں سے بجھانے کی اجازت دے دو
    ہاں مجھے پاس میں آنے کی اجازت دے دو
    دل بھی کیا چیز ہے روکے سے نہیں رکتا ہے
    لب سے شبنم کو چرانے کی اجازت دے دو
    خواب آنکھوں میں بسانے کی اجازت دے دو
    پیار کا خواب ہو تم
    میری نگاہوں میں رہو
    بن کے دھڑکن دلبر
    دل کی پناہوں میں رہو
    مجھکو سانسوں میں بسانے کی اجازت دے دو
    راتیں رنگین بنانے کی اجازت دے دو
    دل بھی کیا چیز ہے روکے سے نہیں رکتا ہے
    بےقراری کو مٹانے کی اجازت دے دو
    بکھری زلفوں کو سجانے کی اجازت دے دو
    راتیں رنگین بنانے کی اجازت دے دو
    ۔
    ۔
    ۔ ۔ ۔
  3. چھٹا انسان
    آف لائن

    چھٹا انسان ممبر

    شمولیت:
    ‏13 دسمبر 2016
    پیغامات:
    500
    موصول پسندیدگیاں:
    126
    ملک کا جھنڈا:
    جب نہ مانا دل دیوانہ
    قلم اٹھا کے جان جاناں
    خط میں نے تیرے نام لکھا
    حال دل تمام لکھا

    کاغذ کے اس ٹکرے کو تم دل سمجھ لینا
    جہاں بوند گری ہو سیاہی کی اسے دل سمجھ لینا
    یادوں میں ڈوب کے
    کاغذ کو چوم کے
    پیار کا تجھکو سلام لکھا
    حال دل تمام لکھا

    میں نے دل سے لاکھ کہا کہ اتنا تڑپنا ٹھیک نہیں
    ایسے کسی کہ پیار میں پاگل تیرا مچلنا ٹھیک نہیں
    دل بولا مجبوری ہے
    خط لکھنا ضروری ہے
    دل ہوا تیرا غلام لکھا
    حال دل تمام لکھا

    پیار کا ایسا اثر بھی ہوگا یہ مجھے معلوم نہ تھا
    اتنا درد جگر بھی ہوگا یہ مجھے معلوم نہ تھا
    میں نے دل تھام کے
    آج تیرے نام سے
    پیار کا پہلا پیام لکھا
    حال دل تمام لکھا
    جب نہ مانا دل دیوانہ
    ۔
    ۔
    ۔ ۔ ۔
  4. چھٹا انسان
    آف لائن

    چھٹا انسان ممبر

    شمولیت:
    ‏13 دسمبر 2016
    پیغامات:
    500
    موصول پسندیدگیاں:
    126
    ملک کا جھنڈا:
    نہ ہنسنا میرے غم پہ انصاف کرنا
    جو میں رو پڑوں تو مجھے معاف کرنا

    جب درد نہیں تھا سینے میں
    تب خاک مزہ تھا جینے میں
    اب کہ شاید ہم بھی روئیں
    ساون کے مہینے میں
    جب درد نہیں تھا سینے میں

    یاروں کا غم کیا ہوتا ہے
    معلوم نہ تھا انجانوں کو
    ساحل پہ کھڑے ہوکر ہم نے
    دیکھا اکثر طوفانوں کو
    اب کہ شاید ہم بھی ڈوبیں
    موجوں کے سفینے میں
    جب درد نہیں تھا سینے میں

    ایسے تو ٹھیس نہ لگتی تھی
    جب اپنے روٹھا کرتے تھے
    اتنا تو درد ہوتا تھا
    جب سپنے ٹوٹا کرتے تھے
    اب کے شاید دل بھی ٹوٹے
    اب کے شاید ہم بھی روئیں
    ساون کے مہینے میں
    جب درد نہ تھا سینے میں

    اس قدر پیار تو کوئی کرتا نہیں
    مرنے والوں کے ساتھ کوئی مرتا نہیں
    آپ کے سامنے میں نہ پھر آؤنگا
    گیت ہی جب نہ ہونگے تو کیا گاؤنگا
    میری آواز پیاری ہے تو دوستوں
    یار بچ جائے میرا دعا سب کرو
    ۔
    ۔
    ۔ ۔ ۔
    Last edited: ‏12 جنوری 2017
  5. چھٹا انسان
    آف لائن

    چھٹا انسان ممبر

    شمولیت:
    ‏13 دسمبر 2016
    پیغامات:
    500
    موصول پسندیدگیاں:
    126
    ملک کا جھنڈا:
    میری قسمت میں تو نہیں شاید
    کیوں تیرا انتظار کرتا ہوں
    میں تجھے کل بھی پیار کرتا تھا
    میں تجھے اب بھی پیار کرتا ہوں
    آج سمجھی ہوں پیار کو شاید
    آج میں تجھکو پیار کرتی ہوں
    کل میرا انتظار تھا تجھکو
    آج میں انتظار کرتی ہوں
    میری قسمت میں تو نہیں شاید

    سوچتا ہوں کہ میری آنکھوں نے
    کیوں سجائے تھے پیار کے سپنے
    تجھ سے مانگی تھی ایک خوشی میں نے
    تو نے غم بھی نہیں دیے اپنے
    زندگی بوجھ بن گئی اب تو
    اب تو جیتا ہوں اور نہ مرتا ہوں
    میں تجھے کل بھی پیار کرتا تھا
    میں تجھے اب بھی پیار کرتا ہوں
    میری قسمت میں تو نہیں شاید

    اب نہ ٹوٹیں یہ پیار کے رشتے
    اب یہ رشتے سنبھالنے ہونگے
    میری راہوں سے تجھکو کل کی طرح
    دکھ کے کانٹے نکالنے ہونگے
    مل نہ جائیں خوشی کے رستے میں
    غم کی پرچھائیوں سے ڈرتی ہوں
    کل میرا نتظار تھا تجھکو
    آج میں انتظار کرتی ہوں
    آج سمجھی ہوں پیار کو شاید

    دل نہیں اختیار میں میرے
    جان جائے گی پیار میں تیرے
    تجھ سے ملنے کی آس ہے آجا
    میری دنیا اداس ہے آجا
    پیار شاید اسی کو کہتے ہیں
    ہر گھڑی بے قرار رہتا ہوں
    رات دن تیری یاد آتی ہے
    رات دن انتظار کرتی ہوں
    میری قسمت میں تو نہیں شاید
    کیوں تیرا انتظار کرتا ہوں
    میں تجھے کل بھی پیار کرتا تھی
    میں تجھے اب بھی پیار کرتا ہوں
    میں تجھے پیار پیار کرتی ہوں
    میں تجھے پیار پیار کرتا ہوں
    ۔
    ۔
    ۔ ۔ ۔

اس صفحے کو مشتہر کریں