1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

یوں مرا انتظار کرنا کبھی

'اردو شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از intelligent086, ‏24 نومبر 2019۔

  1. intelligent086
    آف لائن

    intelligent086 ممبر

    شمولیت:
    ‏28 اپریل 2013
    پیغامات:
    2,126
    موصول پسندیدگیاں:
    234
    ملک کا جھنڈا:
    یوں مرا انتظار کرنا کبھی
    ٹوٹ کر مجھ سے پیار کرنا کبھی

    میرا باطن تو تم پہ ظاہر ہے
    خود کو بھی آشکار کرنا کبھی

    تم نے جو کہہ دیا صحیفہ ہے
    میرا بھی اعتبار کرنا بھی

    تم جہاں بھی ہو صرف میرے ہو
    اعتراف ایک بار کرنا کبھی

    سانس لیتے ہو تم بدن سے مرے
    مجھ اپنا شمار کرنا کبھی
    ٭٭٭

    یاسمین حبیب​
     

اس صفحے کو مشتہر کریں