1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

تمام شہر ہی دشمن ہے کیا کیا جائے

'اردو شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از intelligent086, ‏6 دسمبر 2020۔

  1. intelligent086
    آف لائن

    intelligent086 ممبر

    شمولیت:
    ‏28 اپریل 2013
    پیغامات:
    6,400
    موصول پسندیدگیاں:
    776
    ملک کا جھنڈا:

    تمام شہر ہی دشمن ہے کیا کیا جائے
    وفا کے نام سے بد ظن ہے کیا کیا جائے

    مجھی سے پوچھ رہا ہے یہ میرا ہمسایہ
    تمہارا گھر مرا آنگن ہے کیا کیا جائے

    گرا دیا تھا مرے گھر کو پچھلی بارش نے
    کہ پھر سے گھات میں ساون ہے کیا کیا جائے

    پڑھائی جاتی ہے مکتب میں اب غلط تاریخ
    فسادی ہاتھ میں بچپن ہے کیا کیا جائے

    جو بچے ہو گئے قابل اڑے وہ پنچھی سے
    کہ سونا سونا سا آنگن ہے کیا کیا جائے

    کہ سچ کچل دیا بیوہ کی حسرتوں کی طرح
    کہ جھوٹ ہاتھ میں کنگن ہے کیا کیا جائے

    حویلی دل کی ہے ارمانؔ سونی سونی سی
    اداس روح کا آنگن ہے کیا کیا جائے

    منیر ارمان سلیمی​
     

اس صفحے کو مشتہر کریں