1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

سٹرا بری،امراض قلب میں مفید ۔۔۔۔۔ تحریم نیازی ،نیوٹریشنسٹ

'میڈیکل سائنس' میں موضوعات آغاز کردہ از intelligent086, ‏13 مارچ 2021۔

  1. intelligent086
    آف لائن

    intelligent086 ممبر

    شمولیت:
    ‏28 اپریل 2013
    پیغامات:
    7,065
    موصول پسندیدگیاں:
    795
    ملک کا جھنڈا:
    سٹرا بری،امراض قلب میں مفید ۔۔۔۔۔ تحریم نیازی ،نیوٹریشنسٹ

    پاکستان اس لحاظ سے ان معدودے چند ممالک میں شامل ہے جہاں قدرت نے چار خوبصورت موسم اور ہر قسم کی آب وہوا سے مالامال کر رکھاہے۔ بہار یہاں کا سب سے خوبصورت موسم تصور کیا جاتا ہے جس میں قدرت کے حسین رنگ پھولوں پھلوں کی شکل میں ہر سو بکھرے نظر آتے ہیں۔پاکستان اس لحاظ سے بھی ایک خوش قسمت ملک ہے کہ یہاں ان گنت اقسام کے پھل اور پھول بکثرت پائے جاتے ہیں۔ موسم بہار میں جہاں دل پذیر رنگوں کے پھولوں کا راج ہوتا ہے وہاں خوش رنگ پھل بھی بہار کی آمد میں اپنا حصہ ڈالتے نظر آتے ہیں۔ ایسے میں بہار کی آمد کے ساتھ ہی ایک خوش رنگ، خوش شکل اور لذیذ پھل بھی بہار کا استقبال کرتے نظر آتا ہے۔جو ذائقے اور غذائیت سے لبریز ہوتا ہے۔اس منفرد اور لذیذ پھل کا نام سٹرا بری ہے جو دیگر بہت ساری غذائی خصوصیات کے ساتھ ساتھ وٹامن سی کا ایک بہت بڑا ذخیرہ اپنے اندر سموئے ہوئے ہے۔
    یہ پھل سردیوں کے اختتام کے ساتھ ہی آنا شروع ہو جاتا ہے اس لئے نزلہ، زکام ، فلو اور موسمی انفکشن کے دفاع کی بھر پور صلاحیت رکھتا ہے۔ اس میں فائبر، پوٹاشیم ، میگنیشیم ، جست ،آئوڈین ، فولک ایسڈ ، وٹامن بی،2 وٹامن بی 5اور بی 6 بھی پائے جاتے ہیں۔جو جسمانی دماغی نظام کو بہتر بنانے میں فعال کردار ادا کرنے میں مدد یتے ہیں ۔اس میں چونکہ فائبر کی بھی کچھ مقدار پائی جاتی ہے جس کے سبب یہ آنتوں کے نظام کو فعال رکھنے کے ساتھ ساتھ نظام انہظام کو بہتر بنانے کا کام بھی کرتا ہے جس کے باعث یہ قبض کے مریضوں کے لئے خاصا سود مند پایا گیا ہے۔ یہ قدرتی طور پر کیلوریز والا پھل ہے جس میں چکنائی سرے سے نہیں ہوتی جبکہ نمکیات اور قدرتی مٹھاس کی مقدار بھی بہت کم ہوتی ہے جس کے سبب یہ وزن کو غیر ضروری بڑھنے سے روکتا ہے۔ وٹامن سی کا ایک خزانہ اس میں سمایاہوا ہے جس کے سبب معالجین آنکھ کی بیماریوں میں اسے سود مند قرار دیتے ہیں جبکہ عمر کے ساتھ کم ہوتی نظر میں بھی اس کا استعمال حوصلہ افزا نتائج کا حامل رہا ہے۔
    امراض قلب کے مریضوں کے لئے سٹرا بری کا استعمال کسی نعمت سے کم نہیں ہے۔حال ہی میں امریکہ میں ایک ریسرچ کے دوران ماہرین اس بات پر متفق پائے گئے ہیں کہ سٹرا بری میں چونکہ کینسر اور دل سے بچانے والے عنصر Anthocyanins موجود ہیں جو دل اور کینسر کے امراض سے بچاؤ میں بہترین دفاعی صلاحیت رکھتے ہیں۔یہ اچھے کولیسٹرول کو بڑھانے اور خراب کولیسٹرول کو کم کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے جس کے سبب دل کے مریضوں کا بلڈ پریشر بھی قابو میں رہتا ہے۔ فن لینڈ میں ایک ریسرچ میں دل کے کچھ مریضوں کو باقاعدگی سے آٹھ ہفتے تک روزانہ ایک کپ سٹرا بری کا استعمال کرایا گیا جس سے ان کا اچھا کولیسٹرول حیرت انگیز طور پر بڑھ گیا جبکہ بلڈ پریشر بھی اعتدال پررہا۔ ایک اور ریسرچ کے مطابق یہ دل کی شریانوں کو سخت ہونے سے روکتا ہے، خون کی روانی جاری رہنے کے سبب شریانوں میں جمنے نہیں پاتا۔ شاید یہی وجہ ہے کہ ماہرین امراض قلب کی اکثریت اپنے مریضوں کو باقاعدگی سے اس کے استعمال کا مشورہ دیتے ہیں۔ یہ نہ صرف بلڈ پریشر کو کنٹرول کرتا ہے بلکہ اس کا استعمال شوگرکے مریضوں کے لئے بھی سود مند ہے ، کم مٹھاس کی وجہ سے ذیابیطس کے مریض اسے بلا خطر کھا سکتے ہیں۔
    چین میں اسے دانتوں کی بیماریوں میں بھی سود مند بتایا گیا ہے بلکہ چینی باشندے اس بات پر متفق ہیں کہ اس کا باقاعدہ استعمال دانتوں کی سفیدی کو برقرار رکھتا ہے۔ایک امریکی ریسرچ کے مطابق سٹرابری کھانے والی ماؤں کے ہاں پیدائشی امراض سے محفوظ بچوں کی شرح دوسروں سے زیادہ ہوتی ہے۔ ماہرین غذا اس کا مسلسل استعمال ڈھلتی عمر میں جلد اور چہرے کی جھریوں کے لئے سود مند قرار دیتے ہیں۔زنک کی بڑی مقدار ایک خاص قسم کے نیورون میں ملتی ہے یہ دماغ کے اگلے حصے میں پائے جاتے ہیں۔ سائنس دان ابھی اس کے کردار کا ٹھیک ٹھیک اندازہ تو نہیں لگا سکے مگر اس کی کمی نفسیاتی اور نیورولوجیکل بیماریوں کا باعث بنتی ہے۔ پارکنسن اور انزائمر کی بیماریوں میں بھی زنک کی کمی پائی گئی ہے۔جس کی ضرورت کسی حد تک سٹرا بری سے پوری کی جا سکتی ہے۔
    دور حاضر میں اس کا استعمال ملک شیک، مشروبات اور آئس کریم وغیرہ میں بھی کثرت سے ہونے لگا ہے۔اسے فریزر میں محفوظ کر کے مشروبات، آئس کریم اورسویٹ ڈشز میں بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔
     

اس صفحے کو مشتہر کریں