1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

زبان کب سفید ہونے لگتی ہے؟ ۔۔۔۔ انیلا ثمن

'میڈیکل سائنس' میں موضوعات آغاز کردہ از intelligent086, ‏22 فروری 2021۔

  1. intelligent086
    آف لائن

    intelligent086 ممبر

    شمولیت:
    ‏28 اپریل 2013
    پیغامات:
    7,065
    موصول پسندیدگیاں:
    795
    ملک کا جھنڈا:
    زبان کب سفید ہونے لگتی ہے؟ ۔۔۔۔ انیلا ثمن

    کسی بھی انسان کی زبان کا رنگ اگر گلابی ہو تو یہ اُس کے صحت مند ہونے کی نشانی ہے۔ایسی زبان پر چھوٹی چھوٹی گانٹھیں ہوتی ہیں جسےکہتے ہیں،لیکن بعض اوقات ایسا بھی ہوتا ہے کہ آپ کی زبان کا رنگ بدلنے لگتا ہے۔گہرے رنگ کی کوئی چیز کھانے سے زبان کا رنگ وقتی طور پر بدلتا ہے لیکن اگر ایسا مستقل ہو تو اس کا علاج کرنے کی ضرورت ہے۔

    اکثر آپ نے دیکھا ہو گا کہ زبان کا رنگ سفید ہونے لگتا ہے ۔یہ ایک عام شکایت ہے جو بد بودار سانسوں کا باعث بنتی ہے اور منہ کا ذائقہ بھی کڑوا کر دیتی ہے۔زبان پر سفیدی اس وقت نمودار ہوتی ہے جب کھانے کے ذرے اور مردہ خلیے ورم زدہمیں جمع ہو جاتے ہیں۔اس کے علاوہ زبان کی یہ حالت پانی کی کمی یا صحت کے لیے مضر اشیاء استعمال کرنے سے بھی ہو سکتی ہے۔اس کے علاوہ باقاعدگی سے منہ کی صفائی نہ کرنا اور تیزابی کھانا،کھانا بھی زبان کی سفیدی کا باعث ہو سکتا ہے۔بعض بیماریاں مثلاً جگر کا سکڑنا ،جوائنڈس، اورل تھرش وغیرہ میں بھی زبان سفید ہو جاتی ہے ۔ اس کے علاوہ اینٹی بائیوٹک دوائوں کا زیادہ استعمال بھی اس کی وجوہات میں سے ایک ہے۔بعض صورتوں میں یہ حالت عارضی ہوتی ہے اور اس کا کوئی نقصان نہیں ہوتا۔عام طور پر یہ تشنہ کامی یا پانی کی کمی کی علامت ہو سکتی ہے۔اس صورت میں آپ کو پانی کا استعمال زیادہ سے زیادہ کرنا چاہیے۔قدرتی پھلوں کا جوس زیادہ استعمال کرنے سے بھی یہ شکایت رفع ہو سکتی ہے۔ذیل میں زبان کی سفیدی کو دور کرنے کے چند طریقے درج کیے جا رہے ہیں ۔اگر ان سے افاقہ نہ ہو تو اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں تا کہ وہ اصل وجہ تک پہنچ سکے۔

    نمک زبان کی سفیدی دور کرنے کا بہترین علاج ہے۔جو قدرتی طور پر زبان پر جمے کھانے کے ذرات اور مردہ خلیوں کو چھیل کر اُتار دیتا ہے ۔ زبان پر تھوڑا سا نمک چھڑکیں اور اسے ٹوتھ برش کے ساتھ آہستگی سے زبان پر ملتے جائیں ، بعد میں گرم پانی سے غرارے کر لیںا اسے دن میں دو بار دُہرانے سے آپ کو خاطر خواہ نتائج حاصل ہوں گے۔اگر چاہیں تو صرف گرم پانی میں نمک ڈال کر بھی غرارے کیے جا سکتے ہیں۔

    جب آپ کی زبان پانی کی کمی کی وجہ سے سفید ہو جائے تو اس کے حل کے لیے ویجی ٹیبل گلائسرین کا استعمال بھی بہترین ہے۔

    کوار گندل کے رس میں ورم کش اور صحت مندانہ اجزاء پائے جاتے ہیں اس لیے یہ بھی اس مسئلے کے حل میں مفید ہیں۔استعمال کے لیے ایک چمچ کوار گندل کا رس اپنے منہ میں رکھیں اور چند منٹ بعد نکال دیں۔

    زبان کی سفیدی دور کرنے میں ہلدی بھی نہایت مؤثر کردار ادا کرتی ہے،چونکہ اس میں جراثیم کش اجزاء پائے جاتے ہیں جو زبان پر جراثیم کے پھیلائو کو روکنے میں مدد گار ہوتے ہیں۔اسے استعمال کرنے کے لیے ہلدی میں تھورا سا لیموں کا رس ملا کر اس کا پیسٹ زبان پر لگائیں اور تھوڑی دیر بعد کُلی کر لیں۔

    میٹھا سوڈا زبان پر جمی سفیدی اُتارنے کا سستا اور آسان علاج ہے۔لیموں کے رس میں میٹھا سوڈا ملا کر پیسٹ تیار کریں اور زبان پر لگائیںیا تھوڑا سا میٹھا سوڈا ایک گلاس پانی میں ملا کر اس کے غرارے کریں۔

    نیم زبان کی سفیدی کو مؤثر طریقے سے صاف کرتی ہے۔اس سے زبان پر لگی فنگس صاف ہوتی ہے اور منہ میں موجود دیگر جراثیم کا خاتمہ ہوتا ہے اس کے علاوہ نیم خون بھی صاف کرتی ہے۔نیم کے خشک پتے پانی میں اُبالیں ،جب پانی آدھا رہ جائے تو اس سے غرارے کر لیں۔


     

اس صفحے کو مشتہر کریں