1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

ﺷﺎﺩﯼ ﮐﺮﻧﺎ ﻣﯿﺮﯼ ﺳﻨﺖ ﮨﮯ ❀❀❀

'سیرتِ سرورِ کائنات صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم' میں موضوعات آغاز کردہ از حنا شیخ 2, ‏22 جنوری 2018۔

  1. حنا شیخ 2
    آف لائن

    حنا شیخ 2 ممبر

    شمولیت:
    ‏6 اکتوبر 2017
    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    654
    ملک کا جھنڈا:
    ﺍﯾﮏ ﺩﻓﻌﮧ ﻧﺒﯽ ﭘﺎﮎ ﺻﻠﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻠﯿﮧ ﻭﺁﻟﮧ ﻭﺳﻠﻢ ﻧﮯ ﺍﯾﮏ ﻏﻼﻡ ﺳﮯ ﭘﻮﭼﮭﺎ ﺟﺲ ﮐﮯ ﮐﺎﻥ ﻟﻤﺒﮯ، ﻧﺎﮎ ﻟﻤﺒﯽ ﺍﻭﺭ ﺷﮑﻞ ﻭﺻﻮﺭﺕ ﺑﮭﯽ ﮐﻮﺋﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﮭﯽ ﮐﮧ ﺍﮮ ﻏﻼﻡ ﺷﺎﺩﯼ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﯽ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﮐﮧ ﺣﻀﻮﺭ ﻧﮩﯿﮟ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﯽ ﺗﻮ ﻧﺒﯽ ﭘﺎﮎ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﺗﺠﮭﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﮐﮧ ﺷﺎﺩﯼ ﮐﺮﻧﺎ ﻣﯿﺮﯼ ﺳﻨﺖ ﮨﮯ ﺗﻮ ﻏﻼﻡ ﮐﮩﺘﺎ ﮨﮯ ﺣﻀﻮﺭ ﺷﺎﺩﯼ ﺗﻮ ﺗﺐ ﮐﺮﻭ ﮐﻮﺋﯽ ﺩﮮ ﺭﺷﺘﮧ ﺗﻮ ﺣﻀﻮﺭ ﭘﺎﮎ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎﮐﮧ ﺗﻤﮭﺎﺭﯼ ﺑﺮﺍﺩﺭﯼ ﻣﯿﮟ ﮐﻮﺋﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﻮ ﻏﻼﻡ ﺑﻮﻻ ﺟﯽ ﭼﭽﺎ ﮐﯽ ﺑﯿﭩﯽ ﮨﮯ ﻟﯿﮑﻦ ﮨﻤﺎﺭﺍ ﺟﻮﮌ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﻨﺘﺎ ﮐﯿﻮﻧﮑﮧ ﻭﮦ ﺍﻣﯿﺮ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭﮨﻢ ﻏﺮﯾﺐ ۔ﺗﻮ ﺣﻀﻮﺭ ﭘﺎﮎ ﻧﮯ ﻏﻼﻡ ﺳﮯ ﮐﮩﺎ ﮐﮧ ﺟﺎﺅ ﭼﭽﺎ سے کہو
    ﮐﮧ ﺁﭖ ﮐﯽ ﺑﯿﭩﯽ ﮐﺎ ﺭﺷﺘﮧ ﻣﯿﺮﮮ ﺳﺎﺗﮫ ﻃﮯ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ ۔ﻏﻼﻡ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ ﭼﭽﺎ ﮐﮯ ﮐﮯ ﮔﮭﺮ ﺍﻭﺭ ﭼﭽﺎ ﺳﮯ ﮐﮩﺘﺎ ﮐﮧ ﻣﺠﮭﮯ ﺣﻀﻮﺭ ﭘﺎﮎ ﺻﻠﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﻋﻠﯿﮧ ﻭﺁﻟﮧ ﻭﺳﻠﻢ ﻧﮯ ﺑﯿﺠﮭﺎ ﮨﮯ ﺍﻧﮭﻮﮞ ﻧﮯ ﺁﭖ ﮐﯽ ﺑﯿﭩﯽ ﮐﺎ ﺭﺷﺘﮧ ﻣﯿﺮﮮ ﺳﺎﺗﮫ ﻃﮯ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ ﭼﭽﺎ ﺑﮍﺍ ﭘﺮﯾﺸﺎﻥ ﮨﻮ ﮔﯿﺎ ﮐﮧ ﮨﺎﮞ ﮐﺮﻭ ﮐﮧ ﻧﮧ ﮐﺮﻭ ﺍﮔﺮ ﺍﻧﮑﺎﺭ ﮐﺮﺗﺎ ﮨﻮﮞ ﺗﻮ ﮐﻤﻠﯽ ﻭﺍﻟﮯ ﻧﺎﺭﺍﺽ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﮯ ﭼﭽﺎ ﺳﻮﭺ ﻣﯿﮟ ﭘﮍ ﮔﺌﮯ ﺍﻭﺭ ﺑﺘﯿﺠﮭﮯ ﺳﮯ ﮐﮩﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﺣﻀﻮﺭ ﭘﺎﮎ ﺳﮯ ﮐﮩﻨﺎ ﻣﯿﮟ ﺧﻮﺩ ﺁﺭﮨﺎ ﮨﻮﮞ ﺟﻮﺍﺏ ﺩﯾﻨﮯ ﻏﻼﻡ ﭼﻼ ﮔﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﭼﭽﺎ ﺳﻮﭺ ﺭﮨﺎ ﮨﮯ ﺍﻧﺪﺭ ﺑﯿﭩﯽ ﯾﮧ ﺳﺐ ﮐﭽﮫ ﺳﻦ ﺭﮨﯽ ﺗﮭﯽ ﺩﻭﮌ ﮐﮧ ﺁﺋﯽ ﮐﮩﺘﯽ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺍﺑﺎ ﺟﺎﻥ ﺁﭖ ﻧﮯ ﮨﺎﮞ ﮐﯿﻮﮞ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﯽ ﺍﺑﺎ ﺟﺎﻥ ﺟﻠﺪﯼ ﺟﺎﯾﺌﮟ ﮐﮩﯽ ﻭﮦ ﻧﺎﺭﺍﺽ ﻧﮧ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﺑﺎﺑﺎ ﺟﺎﻥ ﻣﺠﮭﮯ ﯾﮧ ﺭﺷﺘﮧ ﻣﻨﻈﻮﺭ ﮨﮯ ﺑﯿﭩﯽ ﺭﻭ ﺑﮭﯽ ﺭﮨﯽ ﮨﮯ ﺗﻮ ﺑﺎﭖ ﭘﻮﭼﮭﺘﺎ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺑﯿﭩﯽ ﮐﯿﺴﮯ ﻣﻨﻈﻮﺭ ﮨﮯ ﯾﮯ ﺭﺷﺘﮧ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺷﮑﻞ ﻭﺻﻮﺭﺕ ﺑﮭﯽ ﮐﻮﺋﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﮯ ﺗﻮ ﺑﯿﭩﯽ ﮐﮩﺘﯽ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺍﺑﺎ ﺟﺎﻥ ﺁﭖ ﺍﺱ ﮐﻮ ﻧﮧ ﺩﯾﮑﮭﯿﮟ ﺑﻠﮑﮧ ﺍﺱ ﮐﻮ ﺟﺲ ﻧﮯ ﺑﯿﺠﮭﺎ ﮨﮯ ﺍﺱ ﮐﻮ ﺩﯾﮑﮭﯿﮟ ﺟﻮ ﭼﻮﺩﮬﻮﯾﮟ ﮐﺎ ﭼﺎﻧﺪ ﮨﮯ ﺗﻮ ﺑﺎﭖ ﮐﮩﺘﺎ ﮨﮯﮐﮧ ﺑﯿﭩﯽ ﺟﺐ ﻣﻨﻈﻮﺭ ﮨﮯ ﺗﻮ ﺭﻭ ﮐﯿﻮﮞ ﺭﮨﯽ ﮨﻮ ﺗﻮ ﺑﯿﭩﯽ ﮐﮩﺘﯽ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺍﺑﺎ ﺟﺎﻥ ﯾﮧ ﺗﻮ ﺧﻮﺷﯽ ﮐﮯ ﺁﻧﺴﻮ ﮨﮯ ﺩﯾﮑﮭﻮ ﻧﮧ ﺑﺎﺑﺎ ﺟﺐ ﻣﮑﮧّ ﮐﯽ ﻋﻮﺭﺗﯿﮟ ﺳﺐ ﺍﮐﮭﭩﯽ ﮨﻮﮞ ﮔﯽ ﺍﯾﮏ ﮐﮩﮯ ﮔﯽ ﮐﮧ ﻣﯿﺮﺍ ﺭﺷﺘﮧ ﻣﯿﺮﯼ ﻣﺎﮞ ﻧﮯ ﻃﮯ ﮐﯿﺎ ﺩﻭﺳﺮﯼ ﮐﮩﮯ ﮔﯽ ﺑﺎﭖ ﻧﮯ ﻃﮯ ﮐﯿﺎ ﮐﺴﯽ ﮐﮯ ﺑﮭﺎﺋﯽ ﻧﮯ ﻃﮯ ﮐﯿﺎ ﮐﺴﯽ ﮐﮯ ﻣﺎﻣﻮﮞ ﻧﮯ ﻃﮯ ﮐﯿﺎ ﻣﯿﮟ ﮐﺘﻨﯽ ﻣﻘﺪﺭ ﻭﺍﻟﯽ ﮨﻮﮞ ﺟﺲ ﮐﺎ ﺭﺷﺘﮧ ﻧﺒﯽ ﭘﺎﮎ ﺩﻭ ﺟﮩﺎﻧﻮﮞ ﮐﮯ ﺳﺮﺩﺍﺭ ﻧﮯ ﻣﯿﺮﺍ ﺭﺷﺘﮧ ﻃﮯ ﮐﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﻣﺠﮭﮯ ﺍﭘﻨﯽ ﺑﯿﭩﯽ ﺑﻨﺎﯾﺎ۔۔ﻣﺎﺷﺎﺀ ﺍﻟﻠﮧ
     
    ناصر إقبال نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. ناصر إقبال
    آف لائن

    ناصر إقبال ممبر

    شمولیت:
    ‏6 دسمبر 2017
    پیغامات:
    1,670
    موصول پسندیدگیاں:
    343
    ملک کا جھنڈا:
    امام ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ تعالی اپنی کتاب المغنی میں کہتے ہيں :

    فصل :

    نکاح کی مشروعیت میں اصل تو کتاب وسنت اوراجماع ہے :

    کتاب اللہ کے دلائل :

    اللہ سبحانہ وتعالی کا فرمان ہے :

    { اورعورتوں سے جو بھی تمہیں اچھی لگیں تم ان سے نکاح کرلو ، دد دو ، تین تین ، چار چار سے } النساء ( 3 ) ۔

    اورایک دوسرے مقام پرکچھ اس طرح فرمایا :

    { تم میں سے جو مرد و عورت بے نکاح ہیں ان کا نکاح کردو ، اوراپنے نیک بخت غلاموں اورلونڈیوں کا بھی } النور ( 32
     
    نعیم نے اسے پسند کیا ہے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں