1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

ہدیہ ءنعت رسول مقبول ﷺ الحمد للہ بقلم مبشر ڈاہر

'سیرتِ سرورِ کائنات صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم' میں موضوعات آغاز کردہ از مبشر ڈاہر, ‏19 مارچ 2015۔

  1. مبشر ڈاہر
    آف لائن

    مبشر ڈاہر ممبر

    شمولیت:
    ‏18 مارچ 2015
    پیغامات:
    46
    موصول پسندیدگیاں:
    48
    ملک کا جھنڈا:
    ہدیہ ءنعت رسول مقبول ﷺ

    اربابِ ذوق و محبت سے تصحیح وآراء کی درخواست ہے۔۔

    مرے لب پہ آئی ہے نعت عشقِ سرکارؐ کے ساتھ
    مرے دل کا کوچہ ہے شاد عشقِ سرکارؐ کے ساتھ


    لیا تھا ان سے عرق مانگ اک گلِ زار نے جب
    معطر سب گل تبھی سے ہیں عشقِ سرکارؐ کے ساتھ


    اشارے سےٹوٹ کر چاند بھی ہو چُکا مثالی
    بنا چندا بھی مثل حسن عشقِ سرکارؐ کے ساتھ


    جو چلتے تھے ماؔلک اس ارضِ مقدس پہ برہنہ پا
    بہت اعلی کر گئے نام عشقِ سرکارؐ کے ساتھ


    محبت تو ہے محبت محبت کی مثل کیا دوں
    امر اویسؔ ہیں زمانے میں عشقِ سرکارؐ کے ساتھ


    حبِ تمام ان سے ہے شرط تکمیلِ ایماں کی جب
    مکمل ایماں سبھی کر لو عشقِ سرکارؐ کے ساتھ


    متاءِ ہستی لٹا دوں میں بھی درپہ ان کے سارا
    شہنشاہ بھی ہیں گدا ان کے عشقِ سرکار ؐکے ساتھ


    بندھا رہ دستِ کرم سے تو ان کے سرِ خم ڈاہر
    تو بھی ہو جائے گا با فیض عشقِ سرکارؐ کےساتھ


    مبشرحیات ڈاہر


    الحمد للہ تعالی کثیرا علی نعمۃ التوفیق
     
    ملک بلال، ھارون رشید اور پاکستانی55 نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. پاکستانی55
    آف لائن

    پاکستانی55 ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏6 جولائی 2012
    پیغامات:
    98,397
    موصول پسندیدگیاں:
    24,224
    ملک کا جھنڈا:
    جزاک اللہ جناب
     
    مبشر ڈاہر نے اسے پسند کیا ہے۔
  3. ھارون رشید
    آف لائن

    ھارون رشید برادر سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏5 اکتوبر 2006
    پیغامات:
    130,796
    موصول پسندیدگیاں:
    16,618
    ملک کا جھنڈا:
    جزاک اللہ العظیم
     
    مبشر ڈاہر نے اسے پسند کیا ہے۔
  4. مبشر ڈاہر
    آف لائن

    مبشر ڈاہر ممبر

    شمولیت:
    ‏18 مارچ 2015
    پیغامات:
    46
    موصول پسندیدگیاں:
    48
    ملک کا جھنڈا:
    شکریہ نوازش محترم احباب
     
    پاکستانی55 نے اسے پسند کیا ہے۔
  5. نعیم
    آف لائن

    نعیم مشیر

    شمولیت:
    ‏30 اگست 2006
    پیغامات:
    58,062
    موصول پسندیدگیاں:
    11,100
    ملک کا جھنڈا:
    محترم بھائی @مبشرحیات ڈاہر صاحب ۔
    دعا ہے آپ کا ہدیہ عقیدت اللہ کریم اور رسول کریم :drood: کی بارگاہ میں شرفِ قبولیت عطا فرمائے۔ آمین

    اگر شاعرانہ نکتہ نظر سے بات کی جائےتو بصد معذرت عرض ہے کہ اس کلام میں ردیف "عشقِ سرکار کے ساتھ" پر توجہ رکھی گئی ہے
    لیکن وزن اور خاص طور پر "قافیہ" کو بالکل نظر انداز کیا گیا ہے۔
    آپکی نعت میں ردیف "عشقِ سرکار کے ساتھ" ہے۔ جبکہ اس سے عین پچھلا لفظ " نعت" قافیہ بننا چاہیے تھا۔ یعنی ہر مصرعہء ثانی میں " عشقِ سرکار کے ساتھ" سے پہلے والا لفظ " نعت " کا ہم قافیہ ہونا چاہیے تھا
    مثال کے طور حضرت سید نصیرالدین نصیر رحمۃ اللہ علیہ کی مندرجہ ذیل نعت دیکھیے
    اب تنگیء داماں پہ نہ جا اور بھی کچھ مانگ
    ہیں آج وه مائل بہ عطا، اور بھی کچھ مانگ

    ہر چند کے مولا نے بھرا ہے تیرا کشکول
    کم ظرف نہ بن ہاتھ بڑھا ، اور بھی کچھ مانگ

    سرکار کا در ہے درِ شاہاں تو نہیں ہے
    جو مانگ لیا مانگ لیا ، اور بھی کچھ مانگ

    دے سکتے ہیں کچھ کہ وه کچھ دے نہیں سکتے.
    یہ بحث نه کر ہوش میں آ، اور بھی کچھ مانگ

    سرکار کا در ہے در شاہاں تو نہیں ہے.
    جو مانگ لیا مانگ لیا، اور بھی کچھ مانگ.

    پہنچا ہے جو اس در پہ تو ره ره کے "نصیر" آج.
    آواز پہ آواز لگا، اور بھی کچھ مانگ

    اس نعت میں "اور بھی کچھ مانگ" ردیف ہے۔ جبکہ اس سے پہلے نیلے رنگ والے حروف قافیہ ہیں۔
    حسنِ کلام یہ ہوتا ہے کہ قافیہ کا ہرلفظ صوتی ہم آہنگی کے باوجود نیا لفظ ہو۔
     
    Last edited: ‏16 اپریل 2015
    مبشر ڈاہر اور پاکستانی55 .نے اسے پسند کیا ہے۔
  6. مبشر ڈاہر
    آف لائن

    مبشر ڈاہر ممبر

    شمولیت:
    ‏18 مارچ 2015
    پیغامات:
    46
    موصول پسندیدگیاں:
    48
    ملک کا جھنڈا:
    بہت شکریہ جناب نعیم صاحب جناب کی محبتوں اور وقت کا شکرگزار ہوں یہ میری اس کے بعد کی کاوش ہے ، اس پر بھی جناب نظر فرمائیں، اور تنقیدی نوٹس دے کر میری رہنمائی فرمائیں جناب کا سپاس گزار رہوں گا
    مبشر ڈاہر
    اس میں شجرا، قافیہ ہے اور نور کا ردیف ہے،
    ہدیہ ء نعت رسول مقبول ﷺ

    ہے چلا جس نور سے، یہ سارا شجرا نور کا
    مصطفی کی ذات ہی ہے، وہ ستارا نور کا


    ٹوٹا پہلا کنگرا تھا، کفر کے ایوا نوں کا
    آمنہ نے دیکھا تھا جب، پہلا دھارا نو ر کا

    چاند بھی مثلِ حسن، صدقہ ہے یہ نعلین کا
    چہر ہِ انور تو ہے اک، شاہ پارا نورکا


    کتنے نازاں سب ہیں آقا، نام پر تیرے غلام
    بر ملا کہتے ہیں ہر دم، تو سہارا نور کا


    یافت تیرے در کی ہے، ہم کو کمالِ زیست بھی
    مشعلِ مہتاب ہے، ہم پر ضَو پارا نور کا


    گھبراؤ نا دیوانو ،اس تنگی ء دوراں سے تم اب
    وحشتوں کے دور میں ہے، اک سہارا نور کا


    جس بھی دامن میں کھلے ہیں، پھول مدحت کےحسیں
    تیرے ہی بحرِ رواں کا،ہے کنارا نور کا


    سب مشامِ جان بھی ہیں ،بس رہے خوشبوؤں میں
    جب سے دیکھا ہے انہوں نے، اک منارا نور کا


    تجھ کو جو ڈاؔ ہر ملا، حسّا ن کا فیضان ہے
    بھر لے دامن کو اسی سے، یہ ہے سارا نور کا

     
    نعیم نے اسے پسند کیا ہے۔
  7. نعیم
    آف لائن

    نعیم مشیر

    شمولیت:
    ‏30 اگست 2006
    پیغامات:
    58,062
    موصول پسندیدگیاں:
    11,100
    ملک کا جھنڈا:
    سبحان اللہ۔ عمدہ نعتیہ کلام ۔ بہت سی داد اور دعائیں !
     
    مبشر ڈاہر نے اسے پسند کیا ہے۔
  8. مبشر ڈاہر
    آف لائن

    مبشر ڈاہر ممبر

    شمولیت:
    ‏18 مارچ 2015
    پیغامات:
    46
    موصول پسندیدگیاں:
    48
    ملک کا جھنڈا:
    حوصلہ افزائی کے لیے بہت بہت شکریہ جناب اور ٹھیروں دعائیں۔
     
    نعیم نے اسے پسند کیا ہے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں