1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

ہاتھ آنکھوں پہ رکھ لینے سے خطرہ نہیں جاتا

'شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از حنا شیخ, ‏14 اگست 2016۔

  1. حنا شیخ
    آف لائن

    حنا شیخ ممبر

    شمولیت:
    ‏21 جولائی 2016
    پیغامات:
    2,497
    موصول پسندیدگیاں:
    1,335
    ملک کا جھنڈا:
    ہاتھ آنکھوں پہ رکھ لینے سے خطرہ نہیں جاتا
    دیوار سے بھونچال کو روکا نہیں جاتا
    دعووں کی ترازو میں تو عظمت نہیں تُلتی
    فیتے سے تو کردار کو ناپا نہیں جاتا
    فرمان سے پیڑوں پہ کبھی پھل نہیں لگتے
    تلوار سے موسم کوئی بدلا نہیں جاتا
    ظلمت کو گھٹا کہنے سے بارش نہیں ہوتی
    شعلوں کو ہواؤں سے تو ڈھانپا نہیں جاتا
    طوفان میں ہو ناؤ تو کچھ صبر بھی آ جائے
    ساحل پہ کھڑے ہو کے تو ڈوبا نہیں جاتا
    حسنین رحمانی، پاکستانی55 اور آصف احمد بھٹی نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. خزاں رسیدہ
    آف لائن

    خزاں رسیدہ ممبر

    شمولیت:
    ‏15 جولائی 2017
    پیغامات:
    3
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    ملک کا جھنڈا:
  3. حسنین رحمانی
    آف لائن

    حسنین رحمانی ممبر

    شمولیت:
    ‏30 جولائی 2017
    پیغامات:
    1
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    ملک کا جھنڈا:
    حنا شیخ, post: 1027166, member: 4200"]ہاتھ آنکھوں پہ رکھ لینے سے خطرہ نہیں جاتا
    دیوار سے بھونچال کو روکا نہیں جاتا
    دعووں کی ترازو میں تو عظمت نہیں تُلتی
    فیتے سے تو کردار کو ناپا نہیں جاتا
    فرمان سے پیڑوں پہ کبھی پھل نہیں لگتے
    تلوار سے موسم کوئی بدلا نہیں جاتا
    ظلمت کو گھٹا کہنے سے بارش نہیں ہوتی
    شعلوں کو ہواؤں سے تو ڈھانپا نہیں جاتا
    طوفان میں ہو ناؤ تو کچھ صبر بھی آ جائے
    ساحل پہ کھڑے ہو کے تو ڈوبا نہیں جاتا[/QUOTE]
    بہت اچھیب
    بہت اچھا ذوق ہے اپ کا

اس صفحے کو مشتہر کریں