1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

کلیات اقبال رحمۃ اللہ

'اردو شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از آصف احمد بھٹی, ‏20 جولائی 2011۔

  1. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    رقص

    چھوڑ یورپ کے لیے رقص بدن کے خم و پیچ
    روح کے رقص میں ہے ضرب کلیم اللّٰہی!
    صلہ اس رقص کا ہے تشنگی کام و دہن
    صلہ اس رقص کا درویشی و شاہنشاہی!
     
  2. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    سیاسیات مشرق و مغرب
     
  3. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    اشتراکیت

    قوموں کی روش سے مجھے ہوتا ہے یہ معلوم
    بے سود نہیں روس کی یہ گرمی رفتار
    اندیشہ ہوا شوخی افکار پہ مجبور
    فرسودہ طریقوں سے زمانہ ہوا بیزار
    انساں کی ہوس نے جنھیں رکھا تھا چھپا کر
    کھلتے نظر آتے ہیں بتدریج وہ اسرار
    قرآن میں ہو غوطہ زن اے مرد مسلماں
    اﷲ کرے تجھ کو عطا جدت کردار
    جو حرف ’قُلِ العَفو‘ میں پوشیدہ ہے اب تک
    اس دور میں شاید وہ حقیقت ہو نمودار!
     
  4. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    کارل مارکس کی آواز

    یہ علم و حکمت کی مہرہ بازی، یہ بحث و تکرار کی نمائش
    نہیں ہے دنیا کو اب گوارا پرانے افکار کی نمائش
    تری کتابوں میں اے حکیم معاش رکھا ہی کیا ہے آخر
    خطوط خم دار کی نمائش، مریز و کج دار کی نمائش
    جہان مغرب کے بت کدوں میں، کلیساوں میں، مدرسوں میں
    ہوس کی خون ریزیاں چھپاتی ہے عقل عیار کی نمائش
     
  5. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    انقلاب

    نہ ایشیا میں نہ یورپ میں سوز و ساز حیات
    خودی کی موت ہے یہ، اور وہ ضمیر کی موت
    دلوں میں ولولہ انقلاب ہے پیدا
    قریب آگئی شاید جہان پیر کی موت!
     
  6. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    خوشامد

    میں کار جہاں سے نہیں آگاہ، ولیکن
    ارباب نظر سے نہیں پوشیدہ کوئی راز
    کر تو بھی حکومت کے وزیروں کی خوشامد
    دستور نیا، اور نئے دور کا آغاز
    معلوم نہیں، ہے یہ خوشامد کہ حقیقت
    کہہ دے کوئی الو کو اگر ’رات کا شہباز‘!
     
  7. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    مناصب

    ہوا ہے بندئہ مومن فسونی افرنگ
    اسی سبب سے قلندر کی آنکھ ہے نم ناک
    ترے بلند مناصب کی خیر ہو یارب
    کہ ان کے واسطے تو نے کیا خودی کو ہلاک
    مگر یہ بات چھپائے سے چھپ نہیں سکتی
    سمجھ گئی ہے اسے ہر طبیعت چالاک
    شریک حکم غلاموں کو کر نہیں سکتے
    خریدتے ہیں فقط ان کا جوہر ادراک!
     
  8. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    یورپ اور یہود

    یہ عیش فراواں، یہ حکومت، یہ تجارت
    دل سینۂ بے نور میں محروم تسلی
    تاریک ہے افرنگ مشینوں کے دھویں سے
    یہ وادی ایمن نہیں شایان تجلی
    ہے نزع کی حالت میں یہ تہذیب جواں مرگ
    شاید ہوں کلیسا کے یہودی متولی!
     
  9. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    نفسیات غلامی

    شاعر بھی ہیں پیدا، علما بھی، حکما بھی
    خالی نہیں قوموں کی غلامی کا زمانہ
    مقصد ہے ان اﷲ کے بندوں کا مگر ایک
    ہر ایک ہے گو شرح معانی میں یگانہ
    بہتر ہے کہ شیروں کو سکھا دیں رم آہو
    باقی نہ رہے شیر کی شیری کا فسانہ،
    کرتے ہیں غلاموں کو غلامی پہ رضامند
    تاویل مسائل کو بناتے ہیں بہانہ
     
  10. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    بلشویک روس

    روش قضائے الٰہی کی ہے عجیب و غریب
    خبر نہیں کہ ضمیر جہاں میں ہے کیا بات
    ہوئے ہیں کسر چلیپا کے واسطے مامور
    وہی کہ حفظ چلیپا کو جانتے تھے نجات
    یہ وحی دہریت روس پر ہوئی نازل
    کہ توڑ ڈال کلیسائیوں کے لات و منات!
     
  11. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    آج اور کل

    وہ کل کے غم و عیش پہ کچھ حق نہیں رکھتا
    جو آج خود افروز و جگر سوز نہیں ہے
    وہ قوم نہیں لائق ہنگامۂ فردا
    جس قوم کی تقدیر میں امروز نہیں ہے!
     
  12. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    مشرق

    مری نوا سے گریبان لالہ چاک ہوا
    نسیم صبح، چمن کی تلاش میں ہے ابھی
    نہ مصطفی نہ رضا شاہ میں نمود اس کی
    کہ روح شرق بدن کی تلاش میں ہے ابھی
    مری خودی بھی سزا کی ہے مستحق لیکن
    زمانہ دارورسن کی تلاش میں ہے ابھی
     
  13. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    سیاست افرنگ

    تری حریف ہے یارب سیاست افرنگ
    مگر ہیں اس کے پجاری فقط امیر و رئیس
    بنایا ایک ہی ابلیس آگ سے تو نے
    بنائے خاک سے اس نے دو صد ہزار ابلیس!
     
  14. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    خواجگی

    دور حاضر ہے حقیقت میں وہی عہد قدیم
    اہل سجادہ ہیں یا اہل سیاست ہیں امام
    اس میں پیری کی کرامت ہے نہ میری کا ہے زور
    سینکڑوں صدیوں سے خوگر ہیں غلامی کے عوام
    خواجگی میں کوئی مشکل نہیں رہتی باقی
    پختہ ہو جاتے ہیں جب خوئے غلامی میں غلام!
     
  15. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    غلاموں کے لیے

    حکمت مشرق و مغرب نے سکھایا ہے مجھے
    ایک نکتہ کہ غلاموں کے لیے ہے اکسیر
    دین ہو، فلسفہ ہو، فقر ہو، سلطانی ہو
    ہوتے ہیں پختہ عقائد کی بنا پر تعمیر
    حرف اس قوم کا بے سوز، عمل زار و زبوں
    ہو گیا پختہ عقائد سے تہی جس کا ضمیر!
     
  16. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    اہل مصر سے

    خود ابوالہول نے یہ نکتہ سکھایا مجھ کو
    وہ ابوالہول کہ ہے صاحب اسرار قدیم
    دفعتہ جس سے بدل جاتی ہے تقدیر امم
    ہے وہ قوت کہ حریف اس کی نہیں عقل حکیم
    ہر زمانے میں دگر گوں ہے طبیعت اس کی
    کبھی شمشیر محمد ہے، کبھی چوب کلیم ؑ!
     
  17. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    ابی سینیا
    (18 اگست 1935ء)


    یورپ کے کرگسوں کو نہیں ہے ابھی خبر
    ہے کتنی زہرناک ابی سینیا کی لاش
    ہونے کو ہے یہ مردہ دیرینہ قاش قاش!
    تہذیب کا کمال شرافت کا ہے زوال
    غارت گری جہاں میں ہے اقوام کی معاش
    ہر گرگ کو ہے برۂ معصوم کی تلاش!
    اے وائے آبروئے کلیسا کا آئنہ
    روما نے کر دیا سر بازار پاش پاش
    پیر کلیسیا! یہ حقیقت ہے دلخراش!
     
  18. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    ابلیس کا فرمان اپنے سیاسی فرزندوں کے نام

    لا کر برہمنوں کو سیاست کے پیچ میں
    زناریوں کو دیر کہن سے نکال دو
    وہ فاقہ کش کہ موت سے ڈرتا نہیں ذرا
    روح محمد اس کے بدن سے نکال دو
    فکر عرب کو دے کے فرنگی تخیلات
    اسلام کو حجاز و یمن سے نکال دو
    افغانیوں کی غیرت دیں کا ہے یہ علاج
    ملا کو ان کے کوہ و دمن سے نکال دو
    اہل حرم سے ان کی روایات چھین لو
    آہو کو مرغزار ختن سے نکال دو
    اقبال کے نفس سے ہے لالے کی آگ تیز
    ایسے غزل سرا کو چمن سے نکال دو!
     
  19. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    جمعیت اقوام مشرق

    پانی بھی مسخر ہے، ہوا بھی ہے مسخر
    کیا ہو جو نگاہ فلک پیر بدل جائے
    دیکھا ہے ملوکیت افرنگ نے جو خواب
    ممکن ہے کہ اس خواب کی تعبیر بدل جائے
    طہران ہو گر عالم مشرق کا جنیوا
    شاید کرۂ ارض کی تقدیر بدل جائے!
     
  20. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    سلطانی جاوید

    غواص تو فطرت نے بنایا ہے مجھے بھی
    لیکن مجھے اعماق سیاست سے ہے پرہیز
    فطرت کو گوارا نہیں سلطانی جاوید
    ہر چند کہ یہ شعبدہ بازی ہے دل آویز
    فرہاد کی خارا شکنی زندہ ہے اب تک
    باقی نہیں دنیا میں ملوکیت پرویز!
     
  21. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    جمہوریت

    اس راز کو اک مرد فرنگی نے کیا فاش
    ہر چند کہ دانا اسے کھولا نہیں کرتے
    جمہوریت اک طرز حکومت ہے کہ جس میں
    بندوں کو گنا کرتے ہیں، تولا نہیں کرتے!
     
  22. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    یورپ اور سوریا

    فرنگیوں کو عطا خاک سوریا نے کیا
    نبی عفت و غم خواری و کم آزاری
    صلہ فرنگ سے آیا ہے سوریا کے لیے
    مے و قمار و ہجوم زنان بازاری!
     
  23. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    مسولینی
    (اپنے مشرقی اور مغربی حریفوں سے)


    کیا زمانے سے نرالا ہے مسولینی کا جرم!
    بے محل بگڑا ہے معصومان یورپ کا مزاج
    میں پھٹکتا ہوں تو چھلنی کو برا لگتا ہے کیوں
    ہیں سبھی تہذیب کے اوزار! تو چھلنی، میں چھاج
    میرے سودائے ملوکیت کو ٹھکراتے ہو تم
    تم نے کیا توڑے نہیں کمزور قوموں کے زجاج؟
    یہ عجائب شعبدے کس کی ملوکیت کے ہیں
    راجدھانی ہے، مگر باقی نہ راجا ہے نہ راج
    آل سیزر چوب نے کی آبیاری میں رہے
    اور تم دنیا کے بنجر بھی نہ چھوڑو بے خراج!
    تم نے لوٹے بے نوا صحرا نشینوں کے خیام
    تم نے لوٹی کشت دہقاں، تم نے لوٹے تخت و تاج
    پردۂ تہذیب میں غارت گری، آدم کشی
    کل روا رکھی تھی تم نے، میں روا رکھتا ہوں آج!
     
  24. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    گلہ

    معلوم کسے ہند کی تقدیر کہ اب تک
    بیچارہ کسی تاج کا تابندہ نگیں ہے
    دہقاں ہے کسی قبر کا اگلا ہوا مردہ
    بوسیدہ کفن جس کا ابھی زیر زمیں ہے
    جاں بھی گرو غیر، بدن بھی گرو غیر
    افسوس کہ باقی نہ مکاں ہے نہ مکیں ہے
    یورپ کی غلامی پہ رضا مند ہوا تُو
    مجھ کو تو گلہ تجھ سے ہے، یورپ سے نہیں ہے!
     
  25. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    انتداب

    کہاں فرشتہ تہذیب کی ضرورت ہے
    نہیں زمانہ حاضر کو اس میں دشواری
    جہاں قمار نہیں، زن تنک لباس نہیں
    جہاں حرام بتاتے ہیں شغل مے خواری
    بدن میں گرچہ ہے اک روح ناشکیب و عمیق
    طریقہ اب و جد سے نہیں ہے بیزاری
    جسور و زیرک و پردم ہے بچہ بدوی
    نہیں ہے فیض مکاتب کا چشمہ جاری
    نظروران فرنگی کا ہے یہی فتویٰ
    وہ سرزمیں مدنیت سے ہے ابھی عاری!
     
  26. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    لادین سیاست

    جو بات حق ہو، وہ مجھ سے چھپی نہیں رہتی
    خدا نے مجھ کو دیا ہے دل خبیر و بصیر
    مری نگاہ میں ہے یہ سیاست لا دیں
    کنیز اہرمن و دوں نہاد و مردہ ضمیر
    ہوئی ہے ترک کلیسا سے حاکمی آزاد
    فرنگیوں کی سیاست ہے دیو بے زنجیر
    متاع غیر پہ ہوتی ہے جب نظر اس کی
    تو ہیں ہراول لشکر کلیسیا کے سفیر!
     
  27. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    دام تہذیب

    اقبال کو شک اس کی شرافت میں نہیں ہے
    ہر ملت مظلوم کا یورپ ہے خریدار
    یہ پیر کلیسا کی کرامت ہے کہ اس نے
    بجلی کے چراغوں سے منور کیے افکار
    جلتا ہے مگر شام و فلسطیں پہ مرا دل
    تدبیر سے کھلتا نہیں یہ عقدہ دشوار
    ترکان ’جفا پیشہ‘ کے پنجے سے نکل کر
    بیچارے ہیں تہذیب کے پھندے میں گرفتار!
     
  28. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    نصیحت

    اک لرد فرنگی نے کہا اپنے پسر سے
    منظر وہ طلب کر کہ تری آنکھ نہ ہو سیر
    بیچارے کے حق میں ہے یہی سب سے بڑا ظلم
    بَرّے پہ اگر فاش کریں قاعدہ شیر
    سینے میں رہے راز ملوکانہ تو بہتر
    کرتے نہیں محکوم کو تیغوں سے کبھی زیر
    تعلیم کے تیزاب میں ڈال اس کی خودی کو
    ہو جائے ملائم تو جدھر چاہے، اسے پھیر
    تاثیر میں اکسیر سے بڑھ کر ہے یہ تیزاب
    سونے کا ہمالہ ہو تو مٹی کا ہے اک ڈھیر!
     
  29. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    ایک بحری قزاق اور سکندر

    سکندر
    صلہ تیرا تری زنجیر یا شمشیر ہے میری
    کہ تیری رہزنی سے تنگ ہے دریا کی پہنائی!

    قزاق
    سکندر! حیف، تو اس کو جواں مردی سمجھتا ہے
    گوارا اس طرح کرتے ہیں ہم چشموں کی ُرسوائی؟
    ترا پیشہ ہے سفاکی، مرا پیشہ ہے سفاکی
    کہ ہم قزاق ہیں دونوں، تو میدانی، میں دریائی!
     
  30. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,851
    موصول پسندیدگیاں:
    1,755
    ملک کا جھنڈا:
    جواب: کلیات اقبال رحمۃ اللہ

    جمعیت اقوام

    بیچاری کئی روز سے دم توڑ رہی ہے
    ڈر ہے خبر بد نہ مرے منہ سے نکل جائے
    تقدیر تو مبرم نظر آتی ہے ولیکن
    پیران کلیسا کی دعا یہ ہے کہ ٹل جائے
    ممکن ہے کہ یہ داشتہ پیرک افرنگ
    ابلیس کے تعویذ سے کچھ روز سنبھل جائے!
     

اس صفحے کو مشتہر کریں