1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

غزل

'آپ کی شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از اشرف نقوی, ‏11 اگست 2006۔

  1. اشرف نقوی
    آف لائن

    اشرف نقوی ممبر

    شمولیت:
    ‏11 اگست 2006
    پیغامات:
    22
    موصول پسندیدگیاں:
    0

    پیارے دوستو!
    السلام علیکم۔
    کیسے مزاج ہیں آپ سب کے۔
    میں آج پہلی مرتبہ آپ کی خدمت میں اپنی ایک غزل لے کر حاضر ہو رہا ہوں۔ آپ کو یہ غزل کیسی لگی؟ مجھے آپ کی رائے کا شدت سے انتظار رہے گا۔

    غزل​
    خوش بخت ہوں شاید میں سکندر سے زیادہ
    غم بھی تو ملا مجھ کو مقدر سے زیادہ

    وحشت کبھی تم نے نہیں کی، تم کو خبر کیا
    ملتا ہے سکوں دشت میں کیوں‌ گھر سے زیادہ

    عزت سے جیا ہوں ، سو میں عزت سے مروں گا
    دستار یہ پیاری ہے مجھے سر سے زیادہ

    دُنیا! تجھے چاہوں تو میں اشکوں میں بہادوں
    پانی ہے اَن آنکھوں میں سمندر سے زیادہ

    جس دل میں محبت کی رمق بھی نہ ہو موجود
    رکھتا نہیں وقعت کسی پتھر سے زیادہ

    مجھ کو میرے مولا میری اوقات میں رکھنا
    پھیلاؤں نہ پاؤں کبھی چادر سے زیادہ

    باہر سے جو دیکھو تو میں بالکل ہوں سلامت
    ٹوٹا ہوا اشرف ہوں میں اندر سے زیادہ
     
  2. عبدالجبار
    آف لائن

    عبدالجبار منتظم اعلیٰ سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏27 مئی 2006
    پیغامات:
    8,595
    موصول پسندیدگیاں:
    70
    وعلیکم السلام!

    اشرف نقوی بھائی! آوراردو پر خوش آمدید۔۔۔ :)

    وحشت کبھی تم نے نہیں کی، تم کو خبر کیا
    مِلتا ہے سکوں دشت میں کیوں‌ گھر سے زیادہ

    عزت سے جِیا ہوں ، سو میں عزت سے مروں گا
    دستار یہ پیاری ہے مجھے سر سے زیادہ

    جِس دل میں محبت کی رمق بھی نہ ہو موجود
    رکھتا نہیں وُقعت کسی پتھر سے زیادہ

    مجھ کو میرے مولا میری اوقات میں رکھنا
    پھیلاؤں نہ پاؤں کبھی چادر سے زیادہ​


    اشرف بھائی! بہت خوب، بہت ہی اچھی غزل ہے، خدا آپ کی صلاحتوں میں مزید اضافہ فرمائے۔ (آمین)

    اُمید کرتا ہوں آپ اپنی شاعری کو آوراردو کی زینت بنائیں‌گے، مزید آپ کی شاعری کا انتظار رہے گا۔ :)
     
  3. واصف حسین
    آف لائن

    واصف حسین ناظم سٹاف ممبر

    شمولیت:
    ‏3 جولائی 2006
    پیغامات:
    9,906
    موصول پسندیدگیاں:
    1,770
    ملک کا جھنڈا:
    بہت خوب اشرف بھائی۔ بہت خوبصورت غزل ہے۔ کیا کہوں کہ کون سا شعر زیادہ اچھا ہے ۔گویا موتی پرو کر ہماری اردو کی نظر کیے ہیں۔

    امید ہے آئیندہ بھی کچھ نہ کچھ ارسال کرتے رہیں گے۔
     
  4. ثناء
    آف لائن

    ثناء ممبر

    شمولیت:
    ‏13 مئی 2006
    پیغامات:
    245
    موصول پسندیدگیاں:
    5
    واہ نقوی صاحب
    ویسے تو پوری غزل بہت اچھی لگی لیکن یہ شعر کچھ زیادہ ہی بھا گیا ہے

    عزت سے جیا ہوں ، سو میں عزت سے مروں گا
    دستار یہ پیاری ہے مجھے سر سے زیادہ

    بہت خوب
    اور مزید اپنا کلام بھی یہاں شائع کرتے رہیے ہم اس کے منتظر رہیں‌گے۔
     
  5. اشرف نقوی
    آف لائن

    اشرف نقوی ممبر

    شمولیت:
    ‏11 اگست 2006
    پیغامات:
    22
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    جبار بھائی!oururdu.com پر خوش آمدید کہنے پر آپ کا انتہائی ممنون و شکر گزار ہوں۔ غزل آپ کو پسند آئی ، یہ آپ کا حُسن نظر ہے۔ انشاءاللہ آئندہ بھی آپ کو میری
    شاعری برداشت کرنا پڑے گی۔ غزل کی پسندیدگی پر آپ کا بہت بہت شکریہ۔
    ہمیشہ خوش رہیئے، مسکراتے رہیئے۔​
     
  6. اشرف نقوی
    آف لائن

    اشرف نقوی ممبر

    شمولیت:
    ‏11 اگست 2006
    پیغامات:
    22
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    غزل کی پسندیدگی کا شکریہ۔ اللہ آپ کو بہت خوش رکھے (آمین) :lol:
     
  7. اشرف نقوی
    آف لائن

    اشرف نقوی ممبر

    شمولیت:
    ‏11 اگست 2006
    پیغامات:
    22
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    واصف بھائی! oururdu.com پرخوش آمدید کہنے پر آپ کا بہت بہت شکریہ ۔ غزل کی
    اس خوبصورت انداز میں تعریف کرنے پر آپ کا بہت بہت شکریہ۔ اللہ کرے آپ ہمیشہ
    ہنستے مسکراتے رہیں(آمین)۔ :p
     
  8. ع س ق
    آف لائن

    ع س ق ممبر

    شمولیت:
    ‏18 مئی 2006
    پیغامات:
    1,333
    موصول پسندیدگیاں:
    25
    خوش آمدید و زہے نصیب​

    ایک ذی ہوش انسان کی سب سے بہترین دعا جو ہو سکتی ہے، وہ یہی ہے۔
    اللہ رب العزت آپ کی فہم و فراست میں مزید برکت دے اور آپ یونہی ہمیں اپنے معیاری کلام سے نوازتے رہیں۔ بہت شکریہ
     
  9. لاحاصل
    آف لائن

    لاحاصل ممبر

    شمولیت:
    ‏6 جولائی 2006
    پیغامات:
    2,943
    موصول پسندیدگیاں:
    8
    اشرف نقوی صاحب کیا کمال غزل ہے آپ سچ میں بہت کمال کی شاعری کرتے ہیں
     
  10. امین عاصم
    آف لائن

    امین عاصم ممبر

    شمولیت:
    ‏26 جون 2006
    پیغامات:
    61
    موصول پسندیدگیاں:
    6
    ملک کا جھنڈا:
    السلام ُ علیکم محترم اشرف نقوی صاحب

    آج آپ کی غزل پڑھی
    عزت سے جیا ہوں، سو میں عزت سے مروں گا
    دستار یہ پیاری ہے مجھے سر سے زیادہ

    اس خوب صورت شعر پر جتنی بھی داد دی جائے کم ھے، مجموعی طور پر آپ کی غزل بہت اچھی ہے، میری جانب سے دلی داد قبول فرمائیے،
    یھ بھی عمدہ شعر ہے
    مجھ کو مرے مولا مری اوقات میں رکھنا
    پھیلاؤں نہ پاؤں کبھی چادر سے زیادہ

    (اس شعر میں ۔۔۔۔ آپ نے جلدی میں مرے کی بجائے میرے۔۔۔۔ اور ۔۔۔۔ مری کی بجائے میری ۔۔۔ ----- ----- ٹائپ کیا ہے،،،، )

    والسلام
    مخلص
    امین عاصم
     
  11. نعیم
    آف لائن

    نعیم مشیر

    شمولیت:
    ‏30 اگست 2006
    پیغامات:
    58,062
    موصول پسندیدگیاں:
    11,100
    ملک کا جھنڈا:
    بہت خوب نقوی صاحب۔
    اس شعر میں اقبال کے تصورِ شاھین کی یاد تازہ کر دی آپ نے۔

    اللہ کرے زورِ قلم زیادہ
     

اس صفحے کو مشتہر کریں