1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

سرفروشوں نے بھی کب سر دیے اس معرکے میں

'اردو شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از intelligent086, ‏4 دسمبر 2020۔

  1. intelligent086
    آف لائن

    intelligent086 ممبر

    شمولیت:
    ‏28 اپریل 2013
    پیغامات:
    6,400
    موصول پسندیدگیاں:
    776
    ملک کا جھنڈا:

    سرفروشوں نے بھی کب سر دیے اس معرکے میں
    ہم نے بھی ہاتھ کھڑے کر دیے اس معرکے میں
    ہول ایسا تھا ہوئے جاتے تھے پتّے پانی
    شیرِ نرسوتے میں ڈر ڈر دیے اس معرکے میں
    خون بہا کن کے عوض مانگتے پھرتے ہو یہاں
    تم نے تو ریت میں سر کر دیے اس معرکے میں
    اکثریت نے محن پھینک دیے تھے ہتھیار
    چند ہی سر پھر مر کر دیے اس معرکے میں
    ٭...٭...٭
    ڈاکٹر تحسین فراقی​
     

اس صفحے کو مشتہر کریں