1. اس فورم پر جواب بھیجنے کے لیے آپ کا صارف بننا ضروری ہے۔ اگر آپ ہماری اردو کے صارف ہیں تو لاگ ان کریں۔

ساز ہستی کی صدا غور سے سن

'اردو شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از intelligent086, ‏9 دسمبر 2020۔

  1. intelligent086
    آف لائن

    intelligent086 ممبر

    شمولیت:
    ‏28 اپریل 2013
    پیغامات:
    6,400
    موصول پسندیدگیاں:
    776
    ملک کا جھنڈا:

    ساز ہستی کی صدا غور سے سن
    کیوں ہے یہ شور بپا غور سے سن

    کیوں ٹھہرجاتے ہیں دریاسر شام
    روح کے تار ہلا، غور سے سن

    یاس کی چھائوں کی سونے والے
    جاگ اور شوردرا غور سے سن

    کبھی فرصت ہو تو اے صبح جمال
    شب گزیدوں کی دعا غور سے سن

    کچھ تو کہتی ہیں چٹک کر کلیاں
    کیا سناتی ہے صبا، غور سے سن

    دل سے ہر وقت کوئی کہتا ہے
    میں نہیں تجھ سے جدا غور سے سن

    ناصر کاظمی​
     

اس صفحے کو مشتہر کریں